Daily Insaf News Urdu - فخر زمان نے ٹیسٹ کا میدان سنبھالنے کی ٹھان لی

فخر زمان نے ٹیسٹ کا میدان سنبھالنے کی ٹھان لی

Last Update : Tuesday 7 August 2018 - 6:11 AM

فخر زمان نے ٹیسٹ کا میدان سنبھالنے کی ٹھان لی

تھوڑا سنبھل کر بیٹنگ کرنا ہوگی لیکن نیچرل کھیل نہیں چھوڑوں گا،فخر۔ فوٹو: فائل

فخرزمان نے ٹیسٹ کرکٹ کا میدان سنبھالنے کی ٹھان لی،جارح مزاج اوپنر وائٹ کے بعد ریڈ بال سے بھی بولرز کا برا حال کرنے کیلیے بے چین ہیں۔

’’ایکسپریس‘‘ کو خصوصی انٹرویو میں فخرزمان نے کہاکہ میں وائٹ بال سے اپنی کارکردگی پر خوش اور پُر امید ہوں کہ ٹیسٹ میچز میں بھی موقع ملنے پراپنا انتخاب درست ثابت کر دوں گا، مجھے40کے قریب فرسٹ کلاس میچز کھیلنے کا تجربہ حاصل ہے،اس کو پیش نظر رکھتے ہوئے اپنا گیم پلان بنائوں گا، ٹیسٹ میں تھوڑا سنبھل کر کھیلنا ہوتا ہے لیکن ایک بات طے ہے کہ اپنا نیچرل کھیل جاری رکھوں گا۔

انھوں نے کہا کہ پاکستان کیلیے کھیلنا کسی بھی کرکٹر کیلیے اعزاز کی بات ہے،شکرہے میری یہ خواہش پوری ہو گئی،پرستار کارکردگی کو سراہتے اور فخرپاکستان پکارتے ہیں تو خوشی ہوتی ہے،اوپنر نے کہا کہ دورئہ زمبابوے میں فارم اچھی رہی،کمزور ٹیم کو آڑے ہاتھوں لینے کا نہیں سوچا بس ایک ہی عزم تھا کہ پاکستان کیلیے بہتر سے بہتر پرفارم کرنا اورپاور پلے کے بعد لمبی اننگز کھیلنا ہے، اس دوران ریکارڈز بھی بنتے گئے۔

بڑے میچز میں اچھی کارکردگی دکھانے کے سوال پر فخر زمان نے کہا کہ فائنل ہو تو میرا ٹیم کیلیے کچھ کر دکھانے کا عزم اور زیادہ ہوتا جاتا ہے، کوشش کرتا ہوں تو خوش قسمتی سے کامیابی بھی مل جاتی ہے، انھوں نے کہا کہ ایشیا کپ میں بھارت سمیت حریف ٹیموں کا مقابلہ کرنے کیلیے بھرپور تیاری کررہا ہوں، 1،2 روز آرام کے بعد پریکٹس شروع ہوجائے گی، میں بڑے اہداف مقرر کرنے کے حق میں نہیں، صرف میچ در میچ ٹیم کیلیے بہتر کارکردگی پر توجہ رکھتا ہوں۔

عمران وزیراعظم بن کر وعدے پورے کریںگے،بنی گالا نہیں گیا

فخرزمان پُر امید ہیں کہ دنیا کے پہلے کرکٹر وزیراعظم عمران خان اپنے وعدے پورے کریںگے، انھوں نے کہاکہ کوئی بھی منصب سنبھالے عوام کو توقعات تو ہوتی ہیں،ماضی میں سب نے اپنے اپنے حصے کا کام کیا،اب عمران خان کی باری ہے،انھوں نے قوم سے وعدے کیے ہیں،امید ہے کہ ان کو پورا کریںگے۔ایک سوال پر فخرزمان نے کہا کہ میں عمران خان سے ملاقات کیلییے بنی گالا نہیں گیا، صرف سماجی رابطوں کی ویب سائٹ پر مبارکباد دی تھی۔

سرفراز احمد کی ڈانٹ پر ہنسوں تو اور غصے میں آ جاتے ہیں

فخرزمان کو سرفراز احمد کی ڈانٹ کبھی بُری نہیں لگتی،اوپنر نے کہاکہ ہم دونوں کراچی میں 6،7 سال اعظم خان کے پاکستان کرکٹ کلب میں اکٹھے کھیل چکے ہیں، ٹیم میں ان کا مزاج سب سے اچھی طرح میں ہی سمجھتا ہوں،ہماری پرانی دوستی ہے،وہ میرے لیے بڑے بھائی کی طرح ہیں، سرفراز سب سے زیادہ مجھے ڈانٹتے ہیں، پھر جب میں اس پر ہنسنے لگوں تو انھیں اور غصہ آتا ہے لیکن میں نے کبھی بُرا محسوس نہیں کیا۔

بیٹے کے کرکٹر بننے کی امید نہیں

فخرزمان کو اپنے بیٹے کے کرکٹر بننے کی امید نہیں،اوپنر کا کہنا ہے کہ ابھی کچھ کہا تو نہیں جا سکتا کہ اس کے کیا ارادے ہونگے،وہ اپنی مرضی کے مطابق مستقبل کا فیصلہ کرے گا لیکن فی الحال جتنا وہ ہمیں تنگ کرتا ہے اس کو دیکھتے ہوئے مجھے نہیں لگتا کہ وہ کرکٹر بنے گا۔

سعید انور جیسا بننے کی کوشش کروں گا،ملاقات کی خواہش ہے

فخرزمان نے سعید انور سے ملاقات کی خواہش ظاہر کردی،اوپنر کا کہنا ہے کہ زمبابوے میں ڈبل سنچری بناتے ہوئے ابتدا میں سابق اوپنر کا ریکارڈ توڑنے کا خیال نہیں تھا،190رنز بنالیے تو تھوڑا دبائو محسوس کیا،لوگ سعید انور سے موازنہ ضرور کرتے ہیں مگر سابق کرکٹر ایک لیجنڈ تھے اور میں ان کی ہمسری کا دعویٰ نہیں کرسکتا، البتہ میں ان جیسا بننے کی کوشش کروں گا،ان سے ابھی تک ملاقات کا موقع نہیں مل سکا،خواہش ہے کہ کبھی ملوں۔

لاہور قلندرز نے آگے آنے کا موقع دیا، اگلے سیزن میں قیادت ملنے کا علم نہیں

فخرزمان نے کہا کہ کرکٹرزکی صلاحیتیں نکھارنے میں پی ایس ایل کا اہم کردار ہے،لاہور قلندرز نے آگے آنے کا موقع دیا،اسی کے ساتھ این سی اے کوچز کی محنت کو بھی نظر انداز نہیں کرنا چاہیے،مشترکہ کاوشوں سے ہی کرکٹرز کی صلاحیتوں میں نکھار آتا ہے۔ اس سوال پر کہ کیا انھیں اگلے سیزن کیلیے لاہور قلندرز کا کپتان بنایا جا رہا ہے فخرزمان نے کہا کہ میں نے اس بارے میں نہیں سنا، البتہ ڈومیسٹک اور کلب کی سطح پر قیادت کا خاصا تجربہ ہے، دیکھیں آگے کیا ہوتا ہے۔

مثالی فٹنس کا سہرا نیوی کو جاتا ہے

فخرزمان نے اپنی مثالی فٹنس کا سہرانیوی کے سر باندھ دیا،اوپنر کا کہنا ہے کہ فورس کو کراچی میں جوائن کرنے کے بعد سخت ٹریننگ سے گزرا، زندگی میں کبھی اتنی محنت نہیں کی تھی،اس کا فائدہ یہ ہوا کہ فٹنس کی اچھی بنیاد بن گئی،جسم سختی کا عادی ہوچکا تھا،اس لیے بعد ازاں کرکٹ کیریئر میں بھی مشکل پیش نہیں آئی۔

کوچ کو بولنگ مشینیں تو کئی دلا سکتا ہوں مگر دیگر پلانز بھی ہیں

فخرزمان نے پریکٹس کے دوران خراب کی گئی بولنگ مشین کے ساتھ پرانے کوچ کیلیے بہت کچھ کرنے کا ارادہ باندھ لیا،انھوں نے کیریئر کے اوائل میں صبح سویرے گیلی گیند سے پریکٹس شروع کردی جس کی وجہ سے بولنگ مشین خراب ہوگئی تھی،اس وقت انھوں نے کوچ ناظم خان کو نئی مشین دلانے کا وعدہ کیا تھا۔اس حوالے سے سوال پر فخرزمان نے کہا کہ مشینیں تو بہت دلاسکتا ہوں لیکن اس سے آگے کا سوچ رہا ہوں،کوچ آسٹریلیا میں کوچنگ کورسز کا سوچ رہے ہیں،پلان ہے کہ اکیڈمی میں بھی سہولیات ہوں۔

نیوی کے سابق کوچ اور دوستوں کو ہمیشہ یاد رکھتا ہوں

فخرزمان کا کہنا ہے کہ میں نیوی کے کوچ ناظم خان اوراپنے ساتھیوں کو یاد رکھتا ہوں،کراچی آئوں تو کوچ کو فون کرتا اور ساتھ وقت گزارنے کی کوشش کرتا ہوں،3یا 4ماہ بعد دوستوں سے ملاقات کا موقع ملے تو ان کو بلا لیتا ہوں، ہم ایک ہی کمرے میں رہتے اور باتیں کرتے ہیں،میری کوشش ہے کہ دوستی ہمیشہ قائم رہے، ہوسکتا ہے کہ مستقبل میں دوستوں کی وجہ سے کسی وقت کراچی منتقل ہوجائوں، فی الحال مردان میں ہی رہنے کا پروگرام ہے۔

Short Link
Leave a Reply
0 comments
*Name
*Email
Required fields*

Your email address will not be published.

Comments Rules : Dont Use Bad Words

Can be ban if used bad words.

Close
Please support the site